ڈائجسٹ کی دنیا کے عظیم قلمکار : عمران جازب

ڈائجسٹ کی دنیا کے عظیم قلمکار جن کو وہ مقام نہیں مل سکا جس کے وہ حقدار تھے۔محی الدین نواب جیسا نابغہ ادیب جس کے قلم نے ،،دیوتا،، جیسا شاہ کار تخلیق کیا جس نے دو نسلوں کو اپنے سحر میں جکڑے رکھا۔

یا علیم الحق حقی جن کا صوفیانہ طرزِ تحریر ،،عشق کا عین،،میں اپنے اوج پر ہے ،،انسان بمقابلہ شیطان،،اور دیگر کئی لازوال ناولٹ جن کے کریڈٹ پر ہیں

یا اقلیم علیم جن کا معاشرتی و اصلاحی شاہ کار ،، موت کے سوداگر ،، ان کے فن کی کی گواہی دیتا ہے۔

طاہر جاوید مغل جیسا منفرد داستان گو جو ،،للکار،، ،،مفرور،، اور ،،تاوان ،، جیسے شاہ پاروں کا خالق ہے جس کے تخلیق کردہ لافانی کردار ،، جہانی استاد،، نے بڑے بڑوں کو اپنا گرویدہ بنا چھوڑا ہے۔

ڈاکٹر عبدالرب بھٹی کا ،،صحرا گرد،، اس کے علاوہ کاشف زبیر، احمد اقبال ، ساجد امجد کا کام بھی اردو کے ماتھے کا جھومر ہے۔

ایم اے راحت، اسلم راہی ، خان آصف اور الیاس سیتاپوری جیسے مہان تخلیق کار بھی محض اس وجہ سے زمانے کی گرد میں گم ہو کر رہ گئے کہ وہ ڈائجسٹ تک محدود تھے ۔

اب تو بس عمیرہ احمد اور نمرہ احمد کا ہی سکہ چلتا ہے
🤔🤔

Leave a Reply