جب قیصر روم نے

جب قیصر روم نے حضرت عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو خط لکھا

قیصر روم کے بادشاہ نے حضرت عمر فاروق رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو ایک خط لکھا کہ میرے سر میں انتہائی درد رہتا ہے ۔ اس کا کوئی علاج تو بتائیں ۔

حضرت عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے اس کے پاس ایک ٹوپی بھیجی اور کہا کہ اسے اپنے سر پر پہن لو ۔ تمہارا سر کا درد ٹھیک ہو جائے گا۔ چناچہ قیصر روم جب اس ٹوپی کو اپنے سر پر رکھتا تو اس کا درد ٹھیک ہو جاتا اور جب وہ ٹوپی کو سر سے اتارتا تو سر اور بھی شدت سے درد کرنا شروع ہو جاتا ۔

قیصر روم کو اس بات سے بڑا تجسس تھا کہ ایسا کیوں ہوتا ہے۔ لہٰذا اس نے ٹوپی کو کھول کر دیکھا تو ٹوپی کے اندر اسے ایک رقعہ نظر آیا۔ رقعے پر لکھا ہوا تھا ” بسم اللہ الرحمن الرحیم” ۔

یہ بات قیصر روم کے دل میں اتر گئی ۔ وہ کہنے لگا کے اسلام کس قدر عظیم ہے کہ اس کی ﺍیک آیت بھی باعث شفا ہے ، تو پورا دین باعث نجات کیوں نہیں ہو گا ۔

قیصر روم نے یہ سوچ کر اسلام قبول کر لیا ۔

یہ بھی پڑھیں
وہ لوگ جو کردار کی بلندیوں پر پہنچے

Leave a Reply