کنویں میں 5 دن

کنویں میں 5 دن تک پھنسا رہنے والا بچہ آخر زندہ کیسے رہا ؟

جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے یہ کہاوت تو آپ نے سنی ہو گی ۔ لیکن انڈیا میں یہ بات لاکھوں لوگوں نے اپنی آنکھوں سے دیکھ بھی لی ۔ انڈیا کی ایک ریاست میں کنویں میں 5 دن تک پھنسے رہنے والے 10 سالہ بچے کو کنویں سے بحفاظت باہر نکال لیا گیا ہے ۔

یہ واقعہ بھارتی ریاست چھتیس گڑھ کے ضلع بلاس پور میں گذشتہ جمعہ کو پیش آیا تھا ۔ ضلع بلاس میں 10 سالہ راہول کھیلتے ہوئے گہرے کنویں میں جا گرا تھا ۔ اس کنویں کی گہرائی کم و بیش 60 فٹ تھی ۔ بچے کو 104 گھنٹے کے انتہائی طویل ترین ریسکیو آپریشن کے بعد کنویں سے باہر زندہ حاکت میں نکال لیا گیا ہے ۔ 10 سالہ راہول کو فوری طبی امداد کے لئے فوری طور پر اسپتال منتقل کردیا گیا ہے ۔

ہسپتال میں موجود ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ راہول کی موجودہ حالت تسلی بخش ہے اور راہول بہت جلد مکمل طور پر صحت یاب بھی ہو جائے گا۔ راہول کے کنویں میں گرنے کی خبر جنگل میں آگ کی طرح پھیل گئی تھی ۔ اس خبر کے پھیلتے ہی امدادی کارروائیاں فوری طور پر شروع کر دی گئی تھیں ۔ پہلے پہل 10 سالہ راہول کو رسی کی مدد سے کنویں سے نکالنے کے لئے آپریشن کیا گیا تھا لیکن یہ بے سود ثابت ہوا ۔

وہاں کی انتظامیہ نے کنویں کی گہرائی کو مد نظر رکھتے ہوئے روبوٹک ٹیکنالوجی کو بھی استعمال کرنے کا فیصلہ کیا اور راہول کو کنویں سے نکالنے کے لیے گجرات کے روبوٹ انجینئر کا بھی سہارا لیا گیا تھا لیکن روبوٹک ٹیکنالوجی بھی راہول کو کنویں سے نکالنے میں بے کار ثابت ہوئی ۔ بلآخر کان کنی کے ماہرین کی مدد سے کنویں کے قریب سرنگ کھود کر راہول کو کنویں سے نکالنے کا فیصلہ کیا گیا تھا ۔ ان تمام امدادی کاموں کے دوران 5 دن تک بچے کو آکسیجن کے فراہمی ایک پائپ لائن کے ذریعے جاری رکھی گئی تھی ۔

گذشتہ جمعہ سے جاری اس آپریشن میں نیشنل ڈیزاسٹر ریسپانس فورس اور بھارتی فوج، مقامی پولیس اور انتظامیہ کے 5 سو سے زائد افراد نے حصہ لیا تھا ۔ سرنگ کی کھدائی کے دوران راستے میں ایک بہت بڑا پتھر آگیا تھا ۔ لیکن کھدائی کرنے والے کان کنوں نے جدید طریقہ کار کو استعمال میں لا کر اس مشکل کا بھی حل نکال لیا تھا اس طرح 5 دن سے کنویں میں پھنسے ہوئے 10 سالہ راہول کو کنویں سے زندہ سلامت باہر نکال لیا گیا ۔ راہول تا حال اسپتال میں زیر علاج ہے ۔

یہ بھی پڑھیں
وہ گاؤں جہاں کے لوگ کئی کئی دن سوئے رہتے ہیں

Leave a Reply