سیدنا صدیق اکبر

سیدنا صدیق اکبر رضی اللہ تعالیٰ عنہ اور عشق نبی ﷺ

سیدنا صدیق اکبر رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو نبی کریم خاتم النبیین صاحب الجود والکرم حبیب خدا حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ واصحابہ وبارک وسلم سے شدید محبت تھی ۔ سیدنا صدیق اکبر رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے اپنا سب کچھ دین اسلام کے لیے وقف کر دیا تھا اور سب کچھ اپنے حبیب صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ واصحابہ وبارک وسلم کی ذات مبارکہ پر قربان کر دیا تھا ۔

غزوۂ بدر کے موقع پر حضرت ابو بکر صدّیق رضی اللہ عنہ کے صاحبزادے حضرت عبد الرحمٰن رضی اللہ عنہ کفار کی طرف سے مسلمانوں کے خلاف جنگ لڑ رہے تھے ۔ کیوں کہ انہوں رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے غزوہ بدر تک اسلام قبول نہیں کیا ہوا تھا۔ بعد میں ایک دن حضرت عبد الرحمن رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے اسلام قبول کر لیا۔

اسلام قبول کرنے کے بعد ایک دن حضرت عبد الرحمن رضی اللہ تعالیٰ عنہ اپنے والد ماجد سیدنا حضرت ابو بکر صدّیق رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے ساتھ بیٹھے ہوئے تھے ۔ گفتگو کے دوران حضرت عبد الرحمن رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے اپنے والد ماجد سے کہا کہ اے میرے ابّا جان ! غزوۂ بدر میں کئی مرتبہ آپ رضی اللہ تعالیٰ عنہ میری تلوار کے نشانے پر آ ئے تھے لیکن میں نے اپنی تلوار آپ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روک لی کیوں کہ میں نے میدان جنگ میں بھی اس بات کا خیال رکھا تھا کہ آپ میرے والد ماجد ہیں۔

سیدنا حضرت ابو بکر صدّیق رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے فوراً جواب دیا: اگر تم میری تلوار کے نشانے پر ایک مرتبہ بھی آ جاتے، تو میں تمہیں کبھی نہیں چھوڑتا کیوں کہ تم اللہ عزوجل کے رسول خاتم النبیین حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ واصحابہ وبارک وسلم سے جنگ کر رہے تھے۔ (تاریخ الخلفاء)

یہ بھی پڑھیں
اللہ رب العزت کی عظمت اور معرفت کا حق

Leave a Reply