میری ڈائری کا ورق : عافیہ رائے

چند دن قبل سوشل میڈیا پر جہیز کی مخالفت میں چند تصاویر شائع کی گئیں، بلاشبہ اس لعنت کو ختم ھونا چاہئے مگر کیا اسطرح مرد اور عورت کو بالمقابل لا کے ان کے درمیان نفرت کی آگ بھڑکا کر یہ مسئلہ حل ھو جائے گا؟ اللہ پاک نے تو مرد و عورت کے درمیان سبھی رشتے، محبت، خلوص اور احساس کے بنائے ھیں اور مرد تو محافظ ھے عورت کا۔۔۔۔ خدارا ان محبتوں کے درمیان زھر کا بیج نہ بوئیں۔ معاشرتی برائیوں کو ختم کریں نہ کہ رشتوں کے تقدس کو اور یہ تصویر ھی نہ پیش کریں کہ عورت بوجھ تلے دبی ہوئی ھے. مرد پر بھی خاندانی، معاشرتی اور معاشی بوجھ ھیں جو وہ کسی کے سامنے اظہار کرنے سے قاصر ھے۔”ھر تصویر کے دو رخ ھوتے ھین مگر ھم اپنا مطلوبہ رخ ھی دیکھتے اور دکھاتے ھیں.

Leave a Reply