پتھری کی اقسام

گردوں کی پتھری کی اقسام

گردوں کی پتھری کی اقسام

گردوں کی پتھری کی چار اقسام ہوتی ہیں جو درج ذیل ہیں۔

کیلشیم اسٹونز
زیادہ تر افراد کو کیلشیم اسٹونز کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اس پتھری کی سب سے بڑی وجہ پیشاب میں کیلشیم کی مقدار کا بڑھ جانا ہے۔ گردوں میں یہ پتھریاں کیلشیم ، فاسفیٹ اور کیلشیم آکسلیٹ کی صورت میں بنتی ہیں ۔

سسٹائن اسٹونز
پتھری کی یہ قسم بہت ہی کم لوگوں میں پائی جاتی ہے۔ اس پتھری کی بنیادی وجہ موروثی بیماری ہے ۔ جسے سسٹائن یوریا کہتے ہیں ۔ سسٹائن در حقیقت غیر ضروری امائنو ایسڈ ہوتے ہیں ۔ پتھری کی یہ قسم زیادہ تر بچوں اور نوجوانوں میں ہوتی ہے۔

اسٹرووائٹ اسٹونز
پتھری کی یہ قسم انفیکشن اسٹون بھی کہلاتی ہے۔ یہ اسٹون میگنیشیم، امونیم فاسفیٹ اور کیلشیم سے مل کر بنتا ہے ۔ جو گردوں میں انفیکشن کی وجہ سے بھی بنتا ہے۔ جب یہ اسٹون گردوں میں بنتا ہے تو پھر محسوس نہیں ہوتا اور مریض صرف معمولی اور ہلکا ہلکا درد محسوس کرتا ہے۔

یورک ایسڈ اسٹونز
یورک ایسڈ اسٹونز (پتھریاں) عام طور پر ایسے افراد میں بنتی ہیں جو ڈائیریا کی وجہ سے اپنا بہت زیادہ پانی خارج کر دیتے ہیں۔ ایسے افراد جو بہت زیادہ پروٹین والی غذائیں کھا رہے ہوں یا جن کو ذیابیطس کا مرض لاحق ہو ، ان افراد میں بھی یہ پتھری بن سکتی ہے۔ کچھ جینیاتی مسائل بھی اس پتھری کے خطرات کو بڑھاتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں
گردے کی پتھری کی چند وجوہات

Leave a Reply