گردے کی پتھری

گردے کی پتھری کا گھریلو علاج

اگر خدانخواستہ کسی کو گردے کی پتھری کا سامنا کرنا پڑ جائے تو ایسی صورت میں مندرجہ ذیل غذاؤں کا باقاعدگی سے استعمال انتہائی مفید ہوتا ہے ۔

تربوز میں پوٹاشیم کی وافر مقدار موجود ہوتی ہے ۔ جو پیشاب کی تیزابیت کو کم کرنے میں مدد دیتی ہے۔ تربوز میں پانی کی بھی کثیر مقدار موجود ہوتی ہے ۔ جو جسم کو ڈی ہائڈریٹ نہیں ہونے دیتی۔ تربوز کے باقاعدگی سے استعمال کو یقینی بنا کر ہم پتھری کے خطرات کو انتہائی کم کر سکتے ہیں۔

ایسے افراد جو گردے کی پتھری سے بچنا چاہتے ہیں یا اس سے مکمل طور پر چھٹکارا پانا چاہتے ہیں ، ان کو چاہیے کہ وہ پانی زیادہ سے زیادہ استعمال کریں تا کہ پیشاب کے ذریعے پتھری خارج ہو سکے ۔ پانی کے ساتھ مختلف پھلوں کے جوسز بھی استعمال کیے جا سکتے ہیں لیکن سافٹ ڈرنکس ہرگز ہرگز استعمال نہ کریں۔

لیموں میں سٹرک ایسڈ کی وافر مقدار پائی جاتی ہے ۔ جو گردوں کو صحت مند رکھنے کے لیے بہت مفید ثابت ہوتا ہے۔ لیموں میں سائٹریٹ بھی پایا جاتا ہے ۔ یہ پتھری بننے کی علامات کو کم کر دیتا ہے۔

سیب کے سرکے میں ایسے اجزاء موجود ہوتے ہیں ۔ جو غیر ضروری ٹاکسن نکالنے میں مدد فراہم کرتے ہیں ۔ سیب کے سرکے میں موجود سٹرک ایسڈ بھی پتھری نہیں بننے دیتا۔

لوبیے میں وٹامن بی، منرلز اور ریشے پائے جاتے ہیں ۔ یہ سب گردوں کی صفائی میں معاون ثابت ہوتے ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ یہ اجزاء پیشاب کی نالی کو بھی کام بہتر کرنے میں مدد دیتے ہیں۔ لوبیے کو ابال کر یا پکا کر دونوں صورتوں میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔

پوٹاشیم گردوں کو صحت مند بنانے کے لیے اہم کردار ادا کرتی ہے۔ پوٹاشیم کی مطلوبہ مقدار کو خشخاش سے حاصل کیا جاسکتا ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق روزانہ خشخاش استعمال کرنے سے گردے کی پتھری سے مکمل طور پر بچا جا سکتا ہے ۔

کیٹاگری میں : صحت

Leave a Reply