ہیموگلوبن کی کمی

ہیموگلوبن کی کمی کو کیسے دور کیا جاسکتا ہے؟

ہیموگلوبن ایک ایسا پروٹین ہوتا ہے جو انسان کے خون میں موجود لال خلیوں میں پایا جاتا ہے ۔ یہ خلیے جسم میں آکسیجن کو قائم رکھنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں ۔ ہیموگلوبن خلیوں سے کاربن ڈائی آکسائیڈ خارج کر کے پھیپھڑوں میں چھوڑ دیتا ہے ۔ جسے انسان سانس کے ذریعے باہر خارج کر دیتا ہے ۔ لیکن اگر ہیموگلوبن کی سطح کم ہو جائے تو جسم کو یہ افعال سرانجام دینے میں بہت مشکل پیش آتی ہے ۔

ہیموگلوبن کی کمی مختلف وجوہات کی بنا پر ہوتی ہے جس میں آئرن کی کمی ، جگر یا گردوں کے مسائل یا پھر کوئی دائمی بیماری بھی ہو سکتی ہے ۔

ہیموگلوبن کی سطح میں کمی کی صورت میں یہ علامات سامنے آسکتی ہیں اور ان علامات کے ظاہر ہوتے ہی فوری طور پر ڈاکٹر سے رجوع کر لینا چاہیے ۔ دل کی دھڑکن میں بےترتیبی یا دل کی دھڑکن کا تیز چلنا ، چکر آنا ، پٹھوں میں کمزوری کا محسوس ہونا ، سر درد یا جلد کی رنگت کا پیلا پڑ جانا شامل ہے ۔

ہیموگلوبن کی سطح میں اضافہ ہو جاتا ہے۔
قدرتی طور پر آئرن پر مشتمل غذائیں کھانے سے انسان اپنے ہیموگلوبن کی سطح میں اضافہ کر سکتا ہے- آئرن لال خلیوں کی تشکیل میں مدد فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ ہیموگلوبن کی پیدوارا بھی بڑھاتا ہے ۔ آئرن سے بھرپور کچھ غذائیں مندرجہ ذیل ہیں ۔ جن کو استعمال کر کے ہم طبی فوائد اٹھا سکتے ہیں ۔
گوشت اور مچھلی ، انڈے ، خشک میوہ جات ، ہرے پتوں والی سبزیاں ، بیج اور گری دار میوے

اس کے علاوہ فولیٹ کو بھی لازماً اپنی غذا میں شامل کریں ۔ فولیٹ وٹامن بی کی ایک قسم ہے جو ہیموگلوبن کی پیداوار میں انتہائی اہم کردار ادا کرتی ہے ۔ جسم میں فولیٹ کی کمی ہو تو لال خلیے پختہ نہیں ہو پاتے ۔ جس کی وجہ سے ہیموگلوبن کی سطح آہستہ آہستہ کم ہونے لگتی ہے۔
فولیٹ ان قدرتی غذاؤں کو اپنی خوراک میں شامل کر کے حاصل کیا جاسکتا ہے ۔
گوشت ، پالک ، چاول ، مونگ پھلی ، لوبیا

یہ بات ہمیشہ یاد رکھیں کہ آئرن کو جذب ہونے کے لیے مدد درکار ہوتی ہے ۔ جو وٹامن سی ہی کر سکتا ہے ۔ اس لیے اپنی خوراک میں ایسی غذاؤں کو شامل کریں جن میں وٹامن سی کی وافر مقدار پائی جاتی ہو ۔ ترش پھلوں اور ہرے پتوں والی سبزیاں زیادہ سے زیادہ استعمال کریں ۔

یہ بھی پڑھیں
وٹامن ای کے فوائد

Leave a Reply