بلڈ پریشر

ان غذاؤں کا استعمال بلڈ پریشر کو قابو رکھنے میں مدد دیتا ہے۔

پاکستان سمیت دنیا بھر میں ہائی بلڈ پریشر کا مرض انتہائی تیزی سے پھیل رہا ہے ۔ اس کے لیے مریض ہر ماہ سینکڑوں بلکہ ہزاروں روپے کی دوائیں کھا لیتے ہیں۔ لیکن پھر بھی کوئی خاص فرق سامنے نہیں آتا ۔ بلڈ پریشر میں مسلسل اضافہ امراض قلب، فالج اور شوگر کی وجہ بن سکتا ہے۔ اسی لیے ہائی بلڈ پریشر کو ’’خاموش قاتل‘‘ بھی کہا جاتا ہے۔

ذیل میں بعض ایسی غذاؤں کی فہرست بتائی جا رہی ہے جو پاکستان میں عام دستیاب ہیں اور یہ غذائیں ہر ایک کی پہنچ میں بھی ہیں۔ ان غذاؤں کا استعمال بلڈ پریشر کو قابو رکھنے میں مدد دیتا ہے۔

بیریاں
بلیو بیری اور اسٹرابیری میں موجود غذائی اجزاء بلڈ پریشر کو معمول پر رکھتے ہیں۔

کیلا
کیلے میں موجود پوٹاشیم، نمک کے منفی اثرات کو زائل کرکے خون کی رگوں اور شریانوں کو طاقت دیتا ہے ۔

چقندر
اگر آپ ذیابیطس کے مریض نہیں ہیں تو دل کو طاقت دینے اور بلڈ پریشر کو صحت مند رکھنے میں چقندر کے رس کا کوئی ثانی نہیں ہے ۔ روزانہ ایک کپ چقندر کا رس پینے سے محض ایک ہفتے میں ہی اس کے بہترین نتائج سامنے آنا شروع ہوجاتے ہیں ۔

گہری رنگت والی چاکلیٹ :
جس چاکلیٹ میں کوکووا کی مقدار 70 فی صد یا اس سے بھی زائد ہوگی وہ گہرے رنگت والی چاکلیٹ کہلاتی ہے ۔ اس چاکلیٹ میں موجود کئی کیمیکلز خون کا دباؤ معمول پر رکھتے ہیں۔

کیوی
ایک طویل طبی مطالعے کے بعد یہ ثابت ہوا ہے کہ سیب اور کیوی پھل ہائی بلڈ پریشر کو معمول پر رکھنے میں معاون ہیں۔ اسی طرح روزانہ ایک سیب اور کیوی کا پھل کھانے کے بہت سے مفید اثرات مرتب ہوتے ہیں۔

تربوز
تربوز میں موجود ایک امائنو ایسڈ ’سٹرولائن‘ (Citrulline) پایا جاتا ہے جو خون کی رگوں کی لچک کو بڑھاتا ہے۔ اس سے خون کا بہاؤ ہموار ہو جاتا ہے اور بلڈ پریشر بھی معمول پر رہتا ہے۔ تربوز دل کو تندرست اور توانا رکھنے میں بھی بہت مؤثر ثابت ہوا ہے۔

دلیہ
دلیہ ریشہ دار غذا ہے ، جس میں بی ٹا گلوکان وافر مقدار میں پایا جاتا ہے۔ یہ مرکب کولیسٹرول کو کم کرتا ہے اور بلڈ پریشر کو بھی قابو میں رکھتا ہے۔

ہرے پتوں والی سبزیاں
پالک، گوبھی، کیل، اور دیگر سبز پتوں والی سبزیوں میں نائٹریٹ مرکبات وافر مقدار میں موجود ہوتے ہیں۔ اگر دن میں 2 مرتبہ، سبز پتوں والی سبزیاں کھالی جائیں تو اس کے مثبت اثرات 24 گھنٹے تک برقرار رہیں گے ۔

لہسن
لہسن کا استعمال جسم میں نائٹرک آکسائیڈ کی سطح کو بڑھا دیتا ہے۔ اس میں موجود ایک اہم مرکب ’ایلیسین‘ مختلف قسم کی بیماریوں کو روکتا ہے ۔ یہ بلڈ پریشر کو بڑھانے نہیں دیتا۔ لہسن کو کئی کھانوں میں بھی ملا کر کھایا جاسکتا ہے۔

پھلیاں اور دالیں:
گہری رنگت والی پھلیاں اور دالیں ایک جانب تو پروٹینز اور فائبر کا خزانہ ہیں لیکن دوسری جانب ان میں موجود کئی غذائی اجزاء بلڈ پریشر کو بھی قابو میں رکھتے ہیں۔ اس لیے دالوں کا سوپ، سلاد اور دالوں سے بنی دیگر اشیا ضرور استعمال کرنی چاہئیں۔

دہی
دہی بلڈ پریشر کو معمول پر رکھتا ہے اور اس سے خواتین زیادہ مقدار میں فائدہ اٹھا سکتی ہیں۔

دارچینی
دارچینی ایک جانب تو شوگر کو ٹھیک کرتی ہے جب کہ دوسری جانب بلڈ پریشر میں بھی انتہائی مفید ہے۔ در چینی ٹائپ ٹو ذیابیطس کو قابو رکھنے میں بھی مددگار ثابت ہوئی ہے۔

ثابت دھنیا سے بلڈ پریشر کنٹرول کریں

Leave a Reply