اعتماد کا ووٹ؛ 178 ارکان سے کم تعداد ثابت ہوجائے عہدہ چھوڑ دوں گا، اسد قیصر

اسلام آباد: اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کہتے ہیں کہ کوئی یہ ثابت کردے کہ وزیر اعظم کو اعتماد کا ووٹ دینے والے ارکان کی تعداد 178 سے کم تھی تو اپنا عہدہ ہی چھوڑ دوں گا۔

پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد کے باہر چیئرمین سینیٹ صداق سنجرانی کے ہمراہ میڈیا سے بات کرتے ہوئے اسد قیصر نے کہا کہ ہمیں جمہوریت کو مستحکم کرنا ہے، پارلیمنٹ کے اندر اور باہر کے واقعات پر تحقیقات کیلئے کمیٹی بنا دی، پارلیمنٹ کے باہر جو بھی واقعہ ہوا اس کی تحقیقات کرائیں گے۔

وزیراعظم کے اعتماد کے ووٹ کے وقت ارکان کی تعداد سے متعلق پوچھے گئے سوال پر اسد قیصر نے کہا کہ پورا میڈیا موجود تھا ہر کسی نے دیکھا فیصل واوڈا اور مجھے نکال کر 178ارکان موجود تھے، بتائیں کون سا ایم این اے غائب تھا ؟ اگر کوئی ریکارڈ کے ساتھ ثابت کردے کہ ارکان کی تعداد 178سے کم تھی تو عہدہ چھوڑ دوں گا۔
اس موقع پر صادق سنجرانی نے کہا کہ ہمارا مقصد پارلیمنٹ کو مضبوط اور بالادست ادارہ بنانا ہے، جیت کسی کی بھی ہو جمہوریت اور سیاست قائم رہنی چاہیے، سب کو ساتھ لے کر چلنا ہی جمہوریت کا حسن ہے، میں چیئرمین سینیٹ کا امیدوار ہوں، سب کے پاس جاؤں گا، چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی کے پاس بھی ووٹ مانگنے جاؤں گا، سینیٹ الیکشن کیلیے یوسف رضا گیلانی کے پاس جاسکتاہوں تو پھر سب کے پاس جاسکتا ہوں۔

Leave a Reply