گدھوں کی تعداد اس لیے بڑھ رہی کہ اب گدھوں کی نہاری نہیں بن رہی ، علی حیدر زیدی

گدھوں کی تعداد اس لیے بڑھ رہی کہ اب گدھوں کی نہاری نہیں بن رہی ، علی حیدر زیدی

وفاقی وزیر بحری امور علی حیدر زیدی نے کہا کہ اپوزیشن کی تقریروں سے ایسا لگ رہا تھا جیسے 2018 سے پہلے یہاں دودھ کی نہریں تھیں۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر بحری امور علی حیدر زیدی نے قومی اسمبلی اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ بلاول بھٹو نے اپنی تقریر میں انگریزی الفاظ استعمال کیے معلوم نہیں کس کو سنا رہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ حکومتی بینچوں سے کسی نے ویڈیو نہیں بنائی ، البتہ اپوزیشن بینچوں کی طرف سے ویڈیوز بنائی گئیں اور توہین آمیز زبان استعمال کی گئی۔

وفاقی وزیر بحری امور نے کہا کہ انہوں نے تصویر کا ایک رخ دیکھایا ، حکومتی ارکان قوائد کی پاسداری کرتے رہے جبکہ اپوزیشن قوائد کو روندتی رہی ، بلاول مغربی آقاؤں کو خوش کرنے یہاں انگریزی میں تقریر کرتے رہے۔

علی حیدر زیدی نے کہا کہ سوچا تھا بجٹ پر بات کروں پھر ڈیسک بجاؤں یعنی ان کی طرح منافق ہو جاؤں ، یہ ہمیں اس طرح لیکچر نہ دیں ہمیں ان کی حقیقت معلوم ہے۔

انہوں نے کہا کہ کل فادرز ڈے تھا اس لیے جنرل ضیاء کی باقیات پر بات کر لیتے ہیں ، کرکٹ اور اداکاری میں ناکام شخص کو جنرل جیلانی نے جنرل ضیاء کی گود میں بیٹھا دیا ، محترمہ بے نظیر بھٹو نے بھی ابوظہبی میں ایک ڈکٹیٹر سے ڈیل کی۔

وفاقی وزیر بحری امور نے کہا کہ اس اسمبلی کا اب یہ حال ہے کہ یہ وزیر اعظم کے سامنے بیٹھ کر انہیں گالیاں دیتے ہیں ، یہ مراد سعید پر ان کے خاندان پر ذاتی حملے کرتے رہے ، میں اپنے ارکان بلخصوص خواتین سے معذرت خواہ ہو جنہوں نے صبر کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑا۔

علی حیدر زیدی نے کہا کہ میں خاتون اول سے بھی معذرت خواہ ہوں ،انہوں نےان پر بھی کیچڑ اچھالا ، دنیا کہہ رہی ہے کہ کورونا سے نمٹنے کا سبق پاکستان سے سیکھو یہ ہمیں ناکام بتا رہے ہیں ، ہم بل گیٹس کی بات سنیں یا شہباز شریف کی بات سنیں۔

انہوں نے کہا کہ سندھ میں ایک وزیر کے بارے میں سنا ہے کہ وہ دھرتی ٹی وی چینل کے مالک ہیں جہاں بے تحاشا اشتہار جا رہے ہیں ، کراچی میں اتنے سالوں میں صحت و اسپتال تباہ ، تھانے بک رہے ہیں منشیات فروشی عروج پر ہے۔

وفاقی وزیر بحری امور نے کہا کہ سندھ حکومت کے نیچے عزیر بلوچ ، سمیت نا جانے کون کون نکل گیا کسی کو فکر نہیں ، چودہ سال سے سندھ حکومت نے صوبائی فنانس ایوارڈ نہیں دیا اور یہ ہمیں گورننس سیکھا رہے ہیں۔

علی حیدر زیدی نے کہا کہ سندھ کا خرچہ بڑھتا چلا جا رہا ، کیونکہ یہ سیاسی بھرتیاں کر رہے ہیں ، سندھ میں حکومت کی نہ کوئی پالیسی ہے اور نہ ہی کوئی ٹھوس حکمت عملی ہے ، ان کا سیکرٹری فنانس نیب سے پلی بارگین کر کے بیٹھا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پورے بجٹ میں سے کراچی کے لیے سواتین فیصد بجٹ رکھا ہے ، کراچی سب سے زیادہ ٹیکس دیتا ہے لیکن وہاں کے اسکول ، ٹرانسپورٹ ، اسپتال تباہ ہیں ، آج پاکستانی معیشت رن وے پر ٹیک آف کرنے کےلیے کھڑی ہے۔

وفاقی وزیر بحری امور نے کہا کہ تاریخ میں کسی نے نو سو ارب روپے کا ترقیاتی بجٹ نہیں دیا ، احساس پروگرام سے لوگوں کو غربت سے اٹھانے کی کوششیں جاری ہیں ، ہم دو نئے ایل این جی کے ٹرملز لگا رہے ہیں۔

علی حیدر زیدی نے کہا کہ ملک میں گدھوں کی تعداد اس لیے بڑھ رہی کہ اب گدھوں کی نہاری نہیں بن رہی ، سندھ میں کتوں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے اور ٹیکے بھی نہیں مل رہے۔

Leave a Reply