بلدیاتی ادارے بحال نہ کرنے کا معاملہ، سماعت ملتوی

اسلام آباد (ہم دوست نیوز) سپریم کورٹ کے حکم کے باوجود بلدیاتی ادارے بحال نہ کرنے کا معاملہ.

عدالت کے رخصت پر ہونے کی بنا پر سماعت اگلے ہفتے تک ملتوی کردی گئی . عدالت نے حکومت پنجاب سے بلدیاتی اداروں کی بحالی کا ایکشن پلان طلب کر رکھا تھا.عدالت نے چیف سیکرٹری پنجاب کو کو اپنا تحریری ایکشن پلانآ عدالت کو دینے کی ہدایت کر رکھی تھی.عدالت نے چیف سیکرٹری پنجاب جوادرفیق ملک اور سیکرٹری لوکل گورنمنٹ نورالامین مینگل کوطلب کر رکھا تھا.گزشتہ سماعت پر عدالت نے تاحکم ثانی پنجاب بھر کے سابق بلدیاتی ملازمین کو تنخواہیں اور پینش ادا کرنے کی ہدایت کر دی تھی.

عدالت نے سپریم کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد تک بلدیاتی اداروں کا ترقیاتی فنڈز استعمال کرنے پر پابندی عائد کر رکھی ہے .مسز جسٹس عائشہ اے ملک کی رخصت پر ہونے کی بنا پر سابق لارڈ میر کرنل ر مبشر جاوید اور دیگر 10 سابق میرز کی درخواستوں پر سماعت نہ ہو سکی.سپریم کورٹ پاکستان نے بلدیاتی اداروں کو بحال کرنے کا حکم دیا.
سپریم کورٹ کے تحریری فیصلے کے باوجود تاحال بلدیاتی اداروں کو بحال نہیں کیا گیا.حکومت جان بوجھ کر عدالتی حکم پر عملدرآمد نہیں کررہی.بلدیاتی اداروں کی عدم بحالی کے باعث عوامی مسائل حل نہیں ہو پارہے.سپریم کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد نا کرنا توہین عدالت کے زمرے میں آتا ہے.عدالت حکومت کے خلاف توہین عدالت کی کاروائی کا حکم دے .

Leave a Reply