حق کے لیے آواز بلند کرنا صحافی کا جرم بن گیا

مظفرگڑھ:(ہم دوست نیوز) صحافی اعجاز وسیم باکھری ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ ‘‏اور اب میرے گھر کو گرانے کا نوٹس جاری کر دیا گیا ہے۔ اعجاز وسیم باکھری کا کہنا ہے کہ بطور صحافی اپنے والد کی بے توقیری پر شور مچایا ، کوٹ ادو تحریک انصاف کا ایم پی اے اشرف رند انتقام پر اترا آیا ہے ،اس کے کزنز نے میرے ابو کو تھپڑ مارے، ایف آئی آر کٹوانا جرم بن گیا ہے ۔
اعجاز وسیم باکھری نے کہا کہ پولیس نے ایم پی اے کے رشتے داروں کو بھی نہیں اٹھایا۔


اس واقعہ پر وزیراعظم عمران خان کی معاون خصوصی شہباز گل نے کہا ہے کہ ‏متعلقہ حکام کے مطابق آپ کے گھر کے آگے گلی کے اندر ایک غیر قانونی ریمپ بنایا گیا تھا جو پچھلے ہفتے گرایا گیا تھا۔ آپ ایک صحافی ہیں ہمارے لئیے قابل احترام ہیں۔یقین رکھیں آپ کے ساتھ کسی قسم کی زیادتی نہیں ہو گی۔ متعلقہ افسران قانون کے مطابق اس مسلے کو حل کریں گے۔


واضح رہے چند روز قبل اشرف رند کے رشتے داورں نے صحافی اعجاز وسیم باکھری کے والد کو گھر کی دہلیز پر تشدد کا نشانہ بنایا تھا جس پر صحافی کی جانب سے ملزمان پر ایف آئی آر درج کروائی گئی تو رکن اسمبلی کی جانب سے صحافی کو سنگین نتائج کی دھمکیاں دی گئیں۔دھمکیوں کے حوالے سے آڈیو کال اعجاز وسیم باکھری نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر شئیر کی تھی۔ وڈیو میں دیکھا بھی جا سکتا ہے کہ کس طرح صحافی کے بوڑھے والد کو مارا پیٹا جا رہا ہے۔

آڈیو میں اشرف رند کو کہتے ہوئے سنا جاسکتا ہے کہ ’میرے کزنز پر ایف آئی آر کروا کر تم نے میری ایم پی اے شپ چیلنج کی‘جس پر صحافی نے جواب دیا کہ اپنے باپ پر تشدد کی ایف آئی آر کروانا میرا حق تھا۔جس پر رکن اسمبلی کہتے ہیں کہ یہ روٹین کا معاملہ ہے، روز ایسے واقعات ہوتے رہتے ہیں، ایف آئی آر کیوں کروائی؟تم نے ایف آئی آر کروا دی، اب ہماری باری ہے۔میں اب100 نہیں، 110 فیصد تمہارے اینٹی جاؤں گا۔لڑکوں کو لڑنے دو، سب کو کھلی چھٹی ہے لڑیں جس کو لڑنا ہے۔
صحافی اعجاز وسیم باکھری کے ساتھ اس واقعے کے بعد دیگر اسپورٹس جرنلسٹس بھی آواز بلند کرتے ہوئے نظر آتے ہیں، سینئر اسپورٹس جرنلسٹ عبدالماجد بھٹی نے وزیراعظم عمران خان سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

Leave a Reply