عوام کا چکن کی بڑھتی قیمتوں سے تنگ آکر بائیکاٹ کا فیصلہ

نیوز ڈیسک (11 مارچ 2021ء )‌ : گزشتہ ہفتے میں پنجاب سمیت ملک بھر میں چکن کی قیمتوں میں خوفناک حد تک اضافہ دیکھنےمیں آیا ہے. ملک کے بعض حصوں میں 600 روپےتک فی کلوچکن فروخت ہورہا ہے. کراچی اور پشاور میں ہر دوسرے مرغی فروش سے 400 سے 500 روپےتک عام چکن فروخت ہورہا ہے.

پولٹری کا بزنس کرنے والے اس مہنگائی کو طلب و رسد کے نظام سے جوڑ رہے ہیں. ان کا کہنا ہے کہ حالیہ دنوں میں شادیاں اور تقریبات اس قدر بڑے پیمانے پر ہوئی ہیں کہ کورونا وبا سے متاثرہ پولٹری کا شعبہ مزید ضروریات پوری نہیں کرپارہا.

صارفین کی طرف سے رد عمل کچھ اس طرح سے سامنے آیا کہ انہوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر چکن بائیکاٹ کی مہم شروع کی جس میں شہریوں سے اپیل کی گئی کہ عوام کم از کم دس دن تک چکن خریدنے سے مکمل گریز کریں، تاکہ پولٹری انڈسٹری کی بدمعاشی کو ختم کیا جائے.

شہریوں سے گزارش کی گئی کہ 15 دن گوشت کےبجائے سبزیوں پر گزارہ کریں. اس سلسلےمیں ”بائیکاٹ چکن” کا ٹرینڈ پاکستان میں پہلے نمبر پر رہا. صارفین کا خیال ہے کہ دس دن بعد مرغی کی قیمتیں دھڑام سے نیچے آگریں گی.

Leave a Reply