نیب پر حملے کے معاملات کو دیکھا جائے گا، مرادعلی شاہ

نیب پر حملے کے معاملات کو دیکھا جائے گا، مرادعلی شاہ

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ نیب پر حملے کے معاملات کو دیکھا جائے گا، اعجازجاکھرانی کے خلاف قانون کے مطابق تحقیقات کی جائیں گی۔

اپنے جاری کردہ بیان میں ان کا کہنا تھا کہ اعجازجاکھرانی مطلوب ہیں تو بتادیں، ہم قانونی طریقہ اختیارکریں گے۔

وزیراعلی سندھ نے یہ بھی کہا کہ چھاپے مار کر ہراساں کرنا مناسب نہیں ہے ، سندھ میں اچانک چھاپے ماردیے جاتے ہیں۔

کہیں پرچھاپہ اورکہیں کہتے ہیں10 روزپہلے بتایا جائے گا۔

مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کی 3جماعتیں کل موجود تھیں، خوش اسلوبی سے معاملات طے ہوئے تھے۔

انہوں نے اپوزیشن پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ بجٹ پاس ہونے کے بعد اپوزیشن نے ایک بار پھر ہنگامہ کیا تھا، اپوزیشن ارکان نے سندھ اسمبلی میں گھسنے کی کوشش بھی کی تھی جبکہ ہم نے اپوزیشن کی تقریرمیں کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی ہے۔

وزیراعلی سندھ نے مزید کہا کہ اپوزیشن ارکان نے سندھ اسمبلی اسٹاف سے بدتمیزی بھی کی جبکہ اپوزیشن نے بجٹ میں ایک کٹ موشن بھی نہیں جمع کرائی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ سندھ اسمبلی کے بجٹ سیشن میں اپوزیشن نے شورشرابہ کیا جبکہ اپوزیشن کوبجٹ سیشن میں تقریرکا موقع بھی دیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ مراد علی شاہ نے یہ بھی کہا کہ 2 افراد کی عدم حاضری کی وجہ سےفرد جرم عائد نہیں ہوئی ہے ، 28 جولائی کو دوبارہ عدالت میں پیش ہونگے۔

Leave a Reply