کوٹلی مقبرہ خستہ حالی کا شکار

(ہم دوست نیوز) : گوجرانولہ کے قصبے کوٹلی ساہیاں میں موجود کوٹلی مقبرہ خستہ حالی کا شکار ہو گیا۔ یہ مقبرہ مغل اعظم جلال الدین اکبر نے اپنے قاضی کے لیے تعمیر کروایا تھا۔

آج بھی یہ مقبرہ عظیم شاہکار کے طور پر موجود ہے۔مقبرہ تعمیراتی مہارت کا ایک نادر نمونہ ہے جو چار خوبصورت میناروں پر مشتمل ہے اور چاروں طرف سے ہریالی میں گھرا ہوا ہے۔

دور سے دیکھیں تو یہ مقبرہ بہت خوبصورت لگتا ہے لیکن قریب جانے پر معلوم ہوتا ہے کہ کھنڈرات کی شکل اختیار کر چکا ہے۔

شہنشاہ اکبر نے اپنے 16ویں قاضی عبد النبی کے لیے یہ مقبرہ تعمیر کروایا تھا۔ اس کا موازنہ تاج محل سے کیا جاتا تھا لیکن اب یہاں کی خستہ حال دیواریں،ٹوٹے مینار، اکھڑی اینٹیں اور ہی مناظر پیش کرتے ہیں۔

مقبرے کے نیچے ایک لمبی سرنگ بھی موجود ہے۔یہ سرنگ بھی تباہ حال ہو چکی ہے۔کہا جاتا ہے کہ اس سرنگ میں قاضی عبد النبی اور ان کے دو بیٹوں کی بھی قبریں موجود ہیں۔

Leave a Reply