بھارت میں مسلم روحانی

بھارت میں مسلم روحانی پیشوا کو قتل کردیا گیا

بھارت: ( ہم دوست نیوز) پڑوسی ملک بھارت میں افغانستان سے تعلق رکھنے والے 35 سالہ مسلم روحانی پیشوا کو سر میں گولی مار کر قتل کر دیا گیا ہے ۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق 35 سالہ مسلم روحانی پیشوا کا تعلق افغانستان سے ہے ۔ مقتول مسلمان روحانی پیشوا خواجہ سید چشتی مقامی طور پر ’صوفی بابا‘ کے نام سے جانے جاتے ہیں ۔ صوفی بابا کو آج ہی مہاراشٹر میں فائرنگ کر کے قتل کیا گیا ہے۔

آئی سی سی کی نئی ٹیسٹ رینکنگ جاری، بابر اعظم کی پوزیشن برقرار

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ خواجہ سید چشتی عرف صوفی بابا کے سر میں گولی لگی تھی اور وہ موقع پر ہی دم توڑ گئے تھے ۔ جب کہ ان کے قاتل فائرنگ کرنے کے فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے ہیں ۔

بھارتی میڈیا رپورٹس میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ خواجہ سید چشتی کا ڈرائیور ہی ان کے قتل کا مرکزی ملزم بھی ہے۔

پولیس کا مزید کہنا تھا کہ خواجہ سید چشتی کے گواہوں نے ان کے ڈرائیور کا نام ہی بتایا ہے ۔ جب کہ اس حوالے سے مزید تفتیش کی جا رہی ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق پولیس کی جانب سے یہ دعویٰ بھی کیا جا رہا ہے کہ سید چشتی کو کسی پلاٹ کے تنازع پر قتل کیا گیا ہے ۔ کیوں کہ صوفی بابا افغانستان کا شہری ہونے کے باعث بھارت میں زمین اور کسی بھی قسم کی پراپرٹی نہیں خرید سکتے تھے۔

پولیس کا یہ بھی کہنا ہے کہ خواجہ سید چشتی کا قتل ایک خالی پلاٹ میں ہی ہوا ہے ۔

بھارت میں مسلم روحانی پیشوا کو قتل کردیا گیا” ایک تبصرہ

Leave a Reply