روہنگیا مہاجرین کو

روہنگیا مہاجرین کو واپس میانمار جانا چاہیے، حسینہ واجد

(ہم دوست نیوز): بنگلہ دیش کی وزیراعظم حسینہ واجد کا کہنا ہے کہ
کافی عرصہ ہوگیا ہے اس لیے روہنگیا مہاجرین کو واپس میانمار چلے جانا چاہیے۔

تفصیلات کے مطابق بنگلہ دیشی وزیراعظم حسینہ واجد نے کہا ہے کہ روہنگیا کے مہاجرین کو میانمار چلے جانا چاہیے، انہوں نے یہ بات اقوام متحدہ کی سفیر برائے انسانی حقوق مشیل بیچلٹ سے ملاقات کے دوران کہی جو کہ آج کل بنگلہ دیش کے دورے پر ہیں۔

اقوام متحدہ کی سفیر برائے انسانی حقوق اتوار کے روز ڈھاکہ پہنچی اور میانمار کی سرحد کے قریب واقع ایک ضلع میں موجود روہنگیا کے مہاجرین کے خیموں کا دورہ بھی کیا۔

بنگلہ دیش میں بارشوں اور آسمانی بجلی گرنے سے متعدد افراد ہلاک

بنگلہ دیشی وزیراعظم حسینہ واجد نے اس موقع پر کہا کہ روہنگیا مہاجرین میانمار کے شہری ہیں اور ان کو واپس میانمار میں بلایا جانا چاہیے۔

خیال رہے کہ روہنگیا کے مسلمانوں کو میانمار میں امتیازی سلوک کا سامنا ہے، انہیں شہریت دی جاتی ہے اور نہ ہی ان کے بنیادی حقوق کا خیال رکھا جاتا ہے۔جس کی وجہ سے اگست 2017ء میں 7 لاکھ روہنگیا کے مسلمانوں نے بنگلہ دیش کی طرف ہجرت کی، جب میانمار کی فوج نے مسلمانوں کیخلاف ایک آپریشن شروع کیا تھا۔

یاد رہے کہ اس وقت بنگلہ دیش میں مقیم روہنگیا مسلمان مہاجرین کی تعداد 10 لاکھ سے زیادہ ہے۔رواں ماہ کے آغاز میں بنگلہ دیش نے چینی وزیر خارجہ کے دورے کے موقع پر ان مہاجرین کو واپس میانمار بھیجنے کے حوالے سے مدد بھی طلب کی تھی۔

Leave a Reply