احتجاج فسادات سے مختلف

احتجاج فسادات سے مختلف ہوتے ہیں ، ایرانی صدر

ایران :(ہم دوست نیوز) ایران کے صدر ابراہیم رئیسی نے ملکی صورت حال کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ احتجاج فسادات سے مختلف ہوتے ہیں۔کسی کو بھی افراتفری پھیلانے اور قانون توڑنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی نے ٹی وی انٹرویو کے دوران مہسا امینی کی ہلاکت کے بعد ہونے والی بد امنی کی صورت حال کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ عوام کا مطالبہ ہے کہ فسادات میں حصہ لینے والوں سے سختی سے نمٹا جائے۔

مہسا امینی کی ہلاکت پر ایران میں ملک گیر مظاہرے

صدر ابراہیم رئیسی کا کہنا تھا کہ قوم کو مہسا امینی کی ہلاکت پر گہرا دکھ اور افسوس ہے، اس حوالے سے جلد حتمی رپورٹ جاری کی جائے گی، عوام کی حفاظت ایران کی ریڈ لائن ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ سارے واقعے میں دشمن نے قومی یکجہتی کو نشانہ بنایا اور وہ لوگوں کو ایک دوسرے کیخلاف استعمال کرنا چاہتا ہے۔

خیال رہے کہ ایران میں نوجوان لڑکی کی ہلاکت کے بعد ایران کے متعدد شہروں میں مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوگیا تھا، اس دوران پیش آنے والے مختلف واقعات میں متعدد افراد ہلاک اور زخمی بھی ہوئے تھے۔

واضح رہے کہ 16 ستمبر کو پولیس نے تہران میں اسکارف نہ پہننے کی وجہ سے 22 سالہ لڑکی مہسا امینی کوحراست میں لے لیا تھا، وہ لڑکی حراست کے دوران ہی دل کا دورہ پڑنے کی وجہ سے انتقال کرگئی تھی۔

Leave a Reply